دنیا

امریکہ کے مقابلے میں استقامت پر مادورو کی تاکید

وینزوئیلا کے صدر نکولس مادورو نے ہزاروں حکومت حامیوں کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وائٹ ہاؤس کے جنگ پسندوں نے امریکی صدر ٹرمپ کو فریب دیا ہے لیکن ان کا ملک امریکہ کا فرمانبردار نہیں بنے گا اور نہ ہی اس کے سامنے جھکے گا۔

وینزوئیلا کے صدر نکولس مادورو نے ہزاروں حکومت کے حامیوں کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے امریکی صدر ٹرمپ کے بارے میں کہا ہے کہ ان کو دھوکہ ہوا ہے اس لئے کہ انھوں نے وائٹ ہاؤس میں ایسے افراد کو رکھا ہے جو جنگ پسند ہیں اور وینزوئیلا سے بغض و کینہ رکھتے ہیں۔

انھوں نے امریکی صدرکو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ٹرمپ سمجھتے ہیں کہ پوری دنیا کی سلطنت ان کے ہاتھ میں ہے جبکہ ایسا ہرگز نہیں ہے اور وینزوئیلا امریکہ کے سامنے ہرگز گھٹنے نہیں ٹیکے گا اور نہ ہی امریکہ کا فرمانبردار بنے گا۔

نکولس مادورو نے اپنے خطاب میں تجویز پیش کی کہ پارلیمانی انتخابات جو اس وقت مغرب نواز مخالفین کے کنٹرول میں ہے جلد سے جلد منعقد کئے جائیں۔

انھوں نے کہا کہ وینزوئیلا کے بنیادی آئین کی کونسل قبل از وقت پارلیمانی انتخابات کے انعقاد کے مسئلے کا جائزہ لے گی۔

وینزوئیلا کے انتخابات دو ہزار بیس میں کرائے جانے کی منصوبہ بندی کی گئی تھی۔ اس سے قبل وینزوئیلا میں پارلیمانی انتخابات دو ہزار سولہ میں ہوئے تھے اور گذشتہ تین برسوں سے پارلیمنٹ کی سربراہی حکومت مخالف مغرب نواز رہنما خوان گائیدو سنبھالے ہوئے تھے۔

وینزوئیلا کی عدالت عالیہ نے انیس جنوری کو اپنے ملک کے قانونی صدر نکولس مادورو کے خلاف ناکام بغاوت کے بعد خوان گائیدو کو ان کے عہدے سے برطرف کر دیا۔

مخالفین کے لیڈر خوان گائیدو نے تئیس جنوری کو امریکہ اور اس کے اتحادی ملکوں کی کھلی مداخلت و حمایت سے خود کو وینزوئیلا کا صدر قرار دیا۔

امریکہ اور اس کے اتحادی ممالک وینزوئیلا میں خوان گائیدو کی بھرپور حمایت کر کے اس ملک میں بغاوت کرانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

یہ ممالک وینزوئیلا کے خلاف پابندیوں کے نفاذ اور مخالفین کو اکسا کر اس ملک کی قانونی حکومت کا تختہ الٹنے کی کوشش کر رہے ہیں اس لئے کہ موجودہ قانونی حکومت امریکہ نواز نہیں ہے بلکہ وہ اپنے ملک کے بارے میں آزادانہ رجحان رکھتی ہے۔

یہ ایسی حالت میں ہے کہ گذشتہ چند دنوں کے دوران وینزوئیلا کے ہزاروں لوگ نکولس مادورو کی حمایت میں سڑکوں پر نکل کر مظاہرہ کرتے رہے ہیں اور یہ سلسلہ وینزوئیلا کے مختلف شہروں میں جاری ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button