دنیاعراقعربمشرق وسطی

حشد الشعبی کے 5 جوانوں کی شہادت کے بعد ہائی الرٹ جاری

عراق کی سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ شام کی سرحد پر ممکنہ طور پر دہشتگرد گروہ داعش کی دہشتگردانہ کارروائیوں کو روکنے کیلئے ہر قسم کی احتیاطی تدابیر اختیار کر لی گئی ہیں۔

دوسری جانب عراق کے صوبہ دیالی کے عین السمک دیہی علاقے پر داعش کے حملے میں عراق کی عوامی رضا کار فورس حشد الشعبی کے 5 جوان شہید ہوئے۔

واضح رہے کہ عراق میں عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی نے صوبہ الانبار کے علاقے الرمادی میں ایک بڑی فوجی کارروائی شروع کی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ الانبار کے مغربی علاقے میں بیک وقت کئی سیکٹرز سے کارروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے، تازہ ترین رپورٹوں کے مطابق ہونے والی کارروائی میں داعش کے 3 ٹھکانے اور صوبہ دیالہ میں داعش کے ایک ٹنل کو تباہ کردیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ دیالہ صوبے کے جلولاء علاقے میں داعش کے ایک دہشتگردی کے اڈے پر بھی قبضہ کر لیا گیا۔

الحشد الشعبی نے اس سلسلے میں جاری ہونے والے اپنے ایک بیان میں مغربی الانبار میں داعش کی باقیات اور بچے کچے عناصر کے مکمل خاتمے تک آپریشن جاری رکھنے کا عزم ظاہر کیا ہے۔

یاد رہے کہ عراق کے بزرگ مرجع تقلید آیت اللہ العظمی سیستانی نے تیرہ جون دو ہزار چودہ کو الحشد الشعبی کی تشکیل کا فرمان جاری کیا تھا۔ الحشد الشعبی نے عراق میں داعش دہشتگرد گروہ کو شکست سے دوچار کرنے میں نہایت اہم کردار ادا کیا ہے اور اس وقت بھی وہ عراقی فورسز کے شانہ بشانہ داعش کی باقیات کے خلاف جنگ میں پیش پیش ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button