ایرانعربمشرق وسطی

امن معاہدے دشمنوں کے درمیان نہیں بلکہ دیرینہ اتحادیوں کے درمیان ہوئے : جواد ظریف

ایران کے وزير خارجہ نے علاقے کے بعض ملکوں کے ساتھ غاصب صیہونی حکومت کے روابط کی برقراری کیلئے امریکی کوششوں کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکی صدر ٹرمپ کو انتخابات کے لئے ایک فوٹو سیشن کی ضرورت ہے ۔

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزير خارجہ محمد جواد ظریف نے آج پیر کے روز ٹوئیٹ کرتے ہوئے عرب امارات ، بحرین اور غاصب صہیونی حکومت کے درمیان نام نہاد امن معاہدوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے لکھا کہ امن معاہدے دشمنوں کے درمیان نہیں بلکہ دیرینہ اتحادیوں کے درمیان ہوئے ہیں۔

انھوں نے لکھا کہ امریکی صدر ٹرمپ کو انتخابات میں کامیاب ہونے کے لئے ایک فوٹو سیشن کی ضرورت ہے اور اس کے داماد بیرڈ کوشنر نے علاقائی اتحادیوں کو ڈرا دھمکا کر ٹرمپ کے لئے فوٹو سیشن کی راہ ہموار کردی ہے۔

امریکی صدر ٹرمپ کے داماد نے ستمبر کے اوائل میں سعودی عرب، قطر، بحرین اور عمان کا دورہ کیا تا کہ ان ممالک کے حکمرانوں کو اسرائیل کے ساتھ تعلقات کی برقراری کی جانب راغب کریں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close