ایرانمشرق وسطی

آرامکو پر حملے کا الزام بے بنیاد اور من گھڑت ہے: جواد ظریف

ارنا کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے ہفتے کے روز انسٹا گرام پر براہ راست ایک بیان دیا جس میں انہوں نے سعودی آئل کمپنی آرامکو پر ہونے والے حملے میں ایرانی میزائلوں کے استعمال سے متعلق دعووں کو بے بنیاد اور من گھڑت قرار دیا، ساتھ ہی انہوں نے اس بات پر اظہار افسوس کیا کہ اقوام متحدہ کا سیکٹریٹ امریکی دباو میں آگیا ہے۔

ایران کے وزیر خارجہ نے علاقے کی صورتحال کو بحرانی قرار دیتے ہوئے کہا کہ علاقے کے ممالک کو ماضی کی جیل بند ہونے کے بجائے اپنے مستقبل کیلئے ایک دوسرے سے گفتگو کرنی چاہئیے۔

محمد جواد ظریف نے کہا کہ اگر علاقائی ممالک یہ بات سمجھ لیں کہ امریکہ ان کے ساتھ نہیں ہے اور صرف اپنے مفادات کیلئے انہیں استعمال کرتا ہے تو پھر علاقے میں ایک راہ حل اور سمجھوتے تک پہنچا جا سکتا ہے۔

سعودی عرب کی بڑی آئل کمپنی آرامکو پر یمن کے استقامتی محاذ کے ڈرون حملے کے بعد امریکی اور سعودی حکام نے باہمی ہم آہنگی سے کہا تھا کہ ان حملوں میں ایرانی ساخت کے ہتھیار استعمال ہوئے جس کے بعد اقوام متحدہ نے اسے اپنے ایجنڈے میں شامل کیا تھا اور اب اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انٹینو گوتریس نے سلامتی کونسل کے نام اپنی ایک رپورٹ میں دعوی کیا کہ 2019 میں آرامکو اور ابھا بین الاقوامی ایر پورٹ اور اسی طرح اس سے قبل ہونے والے دو حملوں میں ایرانی کردار کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close