ایشیاانسانی حقوقدنیامشرق وسطییمن

پہلے جارح ممالک حملے روکیں، ہم اپنا دفاع جاری رکھیں گے: یمنی رہنما

Yaman Ansarallah

المسیرہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق یمن کی مذاکراتی ٹیم کے سربراہ محمد عبد السلام نے کہا ہے کہ برطانوی حکمرانوں کو یمن کے محاصرے اور اس کے خلاف جارحیت جاری رکھنے کے سلسلے میں اپنے اقدامات کی یاد دہانی کرانا چاہئے۔

ان کا یہ بیان اس ملک میں برطانوی سفیر کے اس بیان کے بعد سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے مآرب اور الجوف کے محاذوں پر انصاراللہ کے حملے روکنے کا مطالبہ کیا تھا۔

محمد عبد السلام نے مزید کہا کہ جو قوم اپنی سرزمین کی دفاع کر رہی ہے وہ صحیح راستے پر چل رہی ہے اور جب تک محاصرہ ختم نہیں ہو جاتا اور جارحیت بند نہیں ہوتی اس وقت تک وہ اپنا دفاع جاری رکھے گی۔

یمن کی کرمنل کورٹ نے پیر کو برطانوی جاسوسوں کے خلاف کیس کی سماعت کی۔ برطانیہ کا خفیہ ادارہ، ایجنٹ خریدنے کے بعد انہیں جدید ترین مواصلاتی سسٹم سے لیس کر کے یمن میں جاسوسی اور تخریبی کارروائیاں کرواتا ہے۔

سعودی عرب، امریکہ، متحدہ عرب امارات اور بعض دیگر ممالک کی مدد سے مارچ دوہزار پندرہ سے یمن کے خلاف فوجی جارحیت کے ساتھ ہی اس ملک کا بری بحری اور فضائی محاصرہ بھی کئے ہوئے ہے۔

جارح سعودی اتحاد کی جارحیتوں کے نتیجے میں اب تک سترہ ہزار سے زیادہ یمنی شہری براہ راست حملوں میں شہید اور دسیوں ہزار زخمی ہو چکے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button