مثالی شخصیاتحسن نصراللہلبنانمشرق وسطی

صیہونی حکومت کو تیل وگیس نکالنے کی اجازت نہیں دی جائےگی ، سید حسن نصراللہ

سید حسن نصراللہ کا واضح بیان

سید حسن نصراللہ نے سالانہ عاشورائی اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ممکن ہے کہ جنگ کی طرف جائیں اور یہ بھی امکان ہے کہ جنگ نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ ہم جنگ کا محاذ کھولنے کا ارادہ نہیں رکھتے ہم صرف اپنے حقوق چاہتے ہیں ہم مضبوط پوزیشن میں ہو کر اپنا موقف پیش کریں گے تاکہ اسرائیل اور امریکا ہمارے سامنے گھٹنے ٹیک دیں –

انہوں نے کہا کہ اگر لبنان میں کچھ لوگ یہ سوچتے ہیں کہ لبنان کو امریکا اور اسرائیل کی بات مان لینی چاہئے تو ایسا کبھی بھی نہیں ہوگا – انہوں نے کہا کہ انیس سو بیاسی میں جب سے حزب اللہ وجود میں آئی ہے امریکا اور اسرائیل اس کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں کیونکہ وہ اچھی طرح سمجھتے تھے کہ حزب اللہ اسرائیل کے ایک بڑا خطرہ ہے –

سید حسن نصراللہ نے کہا کہ آج حزب اللہ اور استقامتی تحریک صرف اسرائیل کے لئے خطرہ نہیں ہے بلکہ علاقے میں امریکا کے سبھی منصوبوں کے لئے خطرہ ہے انہوں نےکہا کہ دشمن کو آج اپنی کمزوری کا احساس ہے اور وہ جنگ نہیں چاہے گا کیونکہ جانتا ہے کہ جنگ صرف حزب اللہ سے نہیں ہوگی ممکن ہے کہ سبھی استقامتی محاذ کے ساتھ جنگ شروع ہوجائے اور پھر نتیجے میں اسرائیل کا شیرازہ بکھر جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

بھی چیک کریں
Close
Back to top button