مشرق وسطییمن

ہیومن آئی کو سعودی جیل سے رہائی مل گئی

یمن کی معصوم بچی بثینہ الریمی جو ہیومن آئی سے مشہور ہوئی تھی ایک سال کے بعد سعودی عرب کی جیل سے قیدیوں کے تبادلے کے سمجھوتے کے بعد رہا ہو گئی۔

یمن کی معصوم بچی بثینہ الریمی جمعہ کی صبح سعودی جیل سے رہا ہونے کے بعد اپے چچا کے اہل خانہ کے ساتھ صنعا واپس چلی گئی۔
یمنی قیدیوں اور لاپتہ شہریوں کے امور کی تنظیم کے سربراہ عبدالقادر المرتضی نے جمعے کو بثینہ سے ملاقات کی۔ انھوں نے اس ملاقات کے بعد تمام یمنی اور بین الاقوامی تنظیموں اور اداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ اس بچی کے اہل خانہ سے ضرور ملاقات کریں تاکہ ڈھائے جانے والے مظالم سے باخبر ہو سکیں۔
بثینہ الریمی سعودی عرب کے جنگی طیاروں کی جانب سے پچّیس اگست دو ہزار سترہ کو اپنے گھر پر ہونے والے حملے میں بچ جانے والی واحد بچی تھی۔
اس حملے میں بثینہ الریمی کے والد ،والدہ اور پانچ بھائی شہید ہو گئے تھے تاہم بثینہ الریمی ملبے تلے دب گئی تھی اور جب اسے ملبے کے نیچے سے نکالا گیا تو وہ اپنی آنکھیں کھولنے کی کوشش کر رہی تھی اسی وجہ سے وہ ہیومن آئی سے مشہور ہوئی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button