عراقعربمشرق وسطی

عراق و کویت کی سرحد پر امریکی دہشتگردوں پر حملہ

تسنیم خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق خبری ذرائع کا کہنا ہے کہ عراق و کویت کی سرحد جریشان کے قریب دہشتگرد امریکی فوجی کانوائے اور ان کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ ابھی تک ان دھماکوں سے ہونے والے جانی اور مالی نقصان کی رپورٹ سامنے نہیں آئی ہے۔

عراق کے مزاحمتی گروہ اصحاب الکهف نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

عراق میں گزشتہ چند ماہ کے دوران امریکی سفارتخانے اور فوجی اڈوں پر حملے ہوتے رہے ہیں اور مارچ 2020 میں بھی امریکی دہشتگردی کے ایک اڈے التاجی کو نشانہ بنایا گیا تھا جس میں 3 امریکی دہشتگرد اور ایک برطانوی فوجی ہلاک اور 12 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔ اس واقعے کے بعد امریکی دہشتگردوں نے اگلے ہی روز عراقی رضاکار فورس حشد الشعبی کے مراکز پر بم گرائے تھے جس میں 3 افراد شہید اور متعدد زخمی ہوئے تھے۔

یاد رہے کہ تین جنوری کو بغداد ایئر پورٹ کے قریب امریکی فوج کے دہشت گردانہ حملے میں ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کی قدس فورس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی اور عراق کی عوامی رضاکار فورس کے ڈپٹی کمانڈر جنرل ابو مہدی المہندس اور ان کے آٹھ دیگر ساتھیوں کی شہادت کے بعد عراق کی پارلیمنٹ نے ایک قرار داد پاس کر کے امریکی فوج کو عراق سے نکل جانے کا حکم دیا تھا۔

لاکھوں عراقی عوام نے پچیس جنوری کو امریکہ کے خلاف ملین مارچ کر کے اپنے ملک سے امریکی فوج کے نکلنے کا مطالبہ کیا تھا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close