انسانی حقوقعربفلسطینمشرق وسطی

فلسطینیوں نے ٹرمپ، بن یامین نیتن یاہو اور بن‌ زاید کی تصاویر کو آگ لگا دی

آئی آر آئی بی کی رپورٹ کے مطابق فلسطینی مظاہرین نے غزہ میں ہونے والے احتجاجی مظاہرے کے دوران متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے مابین ہونے والے معاہدے کے خلاف نعرے لگائے، اس کی مذمت کی اور اسے شرمناک قرار دیا۔

احتجاجی مظاہرین نے امریکی صدر ٹرمپ، صیہونی وزیر اعظم بن یامین نتن یاہو اور متحدہ عرب امارات کے امیر محمد بن‌ زاید کی تصاویر کو پاؤں تلے روندنے کے بعد انہیں آگ لگادی۔

دوسری جانب فلسطین کے صدر محمود عباس نے فرانس کے صدر میکرون کے ساتھ ٹیلیفون پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ متحدہ عرب امارات یا کسی دوسرے عرب ملک کو فلسطینیوں کی طرف سے بولنے کا کوئی حق نہیں۔ محمود عباس نے کہا کہ جو بھی عرب ملک متحدہ عرب امارات کی طرح اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرے گا اس کے ساتھ بھی امارات جیسا سلوک کیا جائے گا اور اس کے ساتھ بھی سفارتی تعلقات ختم کر دئے جائیں گے۔

واضح رہے کہ متحدہ عرب امارات نے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کرنے کا اعلان کیا اور عالمی سطح پر متحدہ عرب امارات کے اس اقدام کو اسلام، مسلمانوں اور فلسطینیوں کے ساتھ غداری اور منافقت قرار دیا جا رہا ہے جبکہ فلسطینی صدر نے اپنا سفیر متحدہ عرب امارات سے ہمیشہ کے لئے واپس بلا لیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close