یورپ

جرمنی کا عراق سے باہر نکلنے کا فیصلہ

عراق میں امریکہ کے کشیدگی پیدا کرنے والے اقدامات کے بعد حکومت جرمنی نے اپنے کچھ فوجی عراق سے باہر نکالنے کا اعلان کردیا ہے۔

جرمنی کے وزیر دفاع آنگرٹ کرامپ کارن پاور اور جرمنی کے وزیرخارجہ ہایکو ماس نے عراقی پارلیمنٹ کے نام ایک خط میں لکھا ہے کہ بغداد اور تاجی کی چھاؤنیوں میں تعینات جرمن فوجیوں کی تعداد میں کمی کی جائے گی۔ جرمنی کے وزیردفاع اور وزیرخارجہ نے مزید کہا کہ عراقی فوجیوں کی ٹریننگ جاری رہنے کے بارے میں عراقی حکومت کے ساتھ مذاکرات جاری رہیں گے۔

اس رپورٹ کے مطابق جرمنی، اپنے فوجیوں کا کچھ حصہ عراق سے کویت اور اردن میں تعینات کرنا چاہتا ہے۔ جرمنی کے ستائیس فوجی شمالی بغداد سے تیس کلومیٹر کی دوری پر واقع تاجی چھاؤنی اور نوے فوجی عراقی کردستان میں تربیتی سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button