عربمشرق وسطییمن

سعودی اتحاد کی جارحیت کے جواب میں جیزان پر حملے

یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس نے سعودی اتحاد کی جارحیت کے جواب میں جنوبی سعودی عرب کے صوبے جیزان میں فوجی ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔

ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق یمنی ذرائع کا کہنا ہے کہ یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس نے سعودی اتحاد کی جارحیت کے جواب میں جنوبی سعودی عرب میں جیزان کے علاقے جحفان میں سعودی فوجی ٹھکانوں پر زلزال ایک قسم کے میزائل سے حملہ کیا۔

یہ ایسی حالت میں ہے کہ یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس نے جیزان میں الستلہ کے علاقے پر شدید گولہ باری بھی کی۔ یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس کی ان جوابی کارروائیوں میں سعودی فوجی ٹھکانوں کو بھاری نقصان پہنچا اور سعودی اتحاد کے کئی فوجی ہلاک و زخمی ہو گئے۔

اس کارروائی میں سعودی اتحاد کے فوجیوں کو بھاری جانی و مالی نقصان پہنچا اور دسیوں فوجی اہلکاروں کے ہلاک و زخمی ہونے کے علاوہ بھاری مقدار میں ہتھیار اور گولہ بارود تباہ ہوگیا ہے۔

اس سے قبل یمنی فوج کے ترجمان شرف لقمان نے تاکید کے ساتھ کہا تھا کہ جب تک یمن کا فوجی محاصرہ اور اس ملک کے عوام پر سعودی اتحاد کی وحشیانہ جارحیت کا سلسلہ جاری ہے، یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس کی جانب سے جوابی حملے کئے جاتے رہیں گے۔

یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس کی جوابی کارروائیوں میں سعودی عرب کی جنوبی سرحدوں میں یمنی فوج کی مکمل برتری کا بخوبی مشاہدہ کیا جا رہا ہے۔

دوسری جانب یمن کی مسلح افواج کے ترجمان یحیی سریع نے اعلان کیا ہے کہ سعودی اتحاد کی جانب سے اپریل کے اختتام تک الحدیدہ میں انّیس ہزار نو سو چوبیس بار فائر بندی کی خلاف ورزی کی گئی۔

سعودی عرب نے امریکا اور متحدہ عرب امارات سمیت بعض دیگر ملکوں کے ساتھ مل کر مارچ دو ہزار پندرہ سے یمن پر وحشیانہ حملے شروع کئے ہیں جن میں دسیوں ہزار بے گناہ شہری مارے گئے ہیں۔

چار سال سے زائد کا عرصہ گذرجانے کے بعد بھی سعودی عرب اپنی وحشیانہ جارحیتوں کا کوئی بھی مقصد حاصل نہیں کرسکا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button