مشرق وسطییمن

یمن میں ہر 10 منٹ میں ایک بچہ جاں بحق ہوجاتا ہے: وزارت صحت

یمن کی وزارت صحت نے اعلان کیا ہے کہ یمن پر سعودی عرب کی جارحیت اور بربریت کی وجہ سے ہر دس منٹ میں ایک بچہ جاں بحق ہوجاتا ہے۔

المیادین کی رپورٹ کے مطابق یمن کی وزارت صحت نے ایک رپورٹ شائع کی ہے جس کے مطابق سعودی عرب کے ہوائی حملوں میں ایک لاکھ سے زائد افراد معذور ہوگئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق یمن کے 3۔2 ملین بچوں کو غذائی قلت کا سامنا ہے اور سعودی عرب کے محاصرے اور بربریت کی وجہ سے ہر دس منٹ میں ایک یمنی بچہ موت کے منہ میں چلا جاتا ہے۔

سعودی عرب نے امریکا اور اسرائیل کی حمایت سے اور اتحادی ملکوں کے ساتھ مل کر چھبیس مارچ دوہزار پندرہ سے یمن پر وحشیانہ جارحیتوں کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے ۔ اس دوران سعودی حملوں میں دسیوں ہزار یمنی شہری شہید اور زخمی ہوئے ہیں جبکہ دسیوں لاکھ یمنی باشندے اپنے گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہوئے ہیں ۔

یمن کا محاصرہ جاری رہنے کی وجہ سے یمنی عوام کو شدید غذائی قلت اور طبی سہولتوں اور دواؤں کے فقدان کا سامنا ہے ۔

سعودی عرب نے غریب اسلامی ملک یمن کی بیشتر بنیادی تنصیبات اسپتال اور حتی مسجدوں کو بھی منہدم کردیا ہے لیکن اس کے باوجود سعودی عرب یمن پر مسلط کردہ جنگ میں اپنے اہداف تک پہنچنے میں بری طرح ناکام ہوگیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button